کم عمر غلام کنیز

1910 کا عرب ملک تیونس- جب ایک بغیر کپڑوں کی کم عمر غلام کنیز آپنے آقا مولانا کو وضو کروا رہی ہے۔<br /><br /><br /><br /><br />
یہ بات نہیں کہ اسلام نے خودبخود انسانیت کی فلاح کی خاطر غلام رکھنا بند کر دیا۔ یہ تو مغربی لعنت ملامت اور دباوُ تھا جس کے آگے مجبور ہو کر مسلمانوں نے کنیز، لونڈی اور غلام رکھنے کا سلسلہ اوپر اوپر سے بند کیا مگر بالواسطہ یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے.</p><br /><br /><br /><br />
<p>یہ تصویر CHATELAIN Marcel (Eugène) نے کھینچی ہے۔ ان کی 1903 سے 1914 عرصے میں تیونس کیں کھینچی گئی تصاویر کو تلاش کر کہ منظر عام پر لایا گیا ہے۔ یہ تصاویر فرانس کی ایک آرٹ نیلام گھر میں موجود ہیں۔ تصویر کی اصلی کاپی یہاں پر مہیا ہے<br /><br /><br /><br /><br />
http://commons.wikimedia.org/wiki/File:Eugène_Chatelain_-_Adda_et_le_vieillard,_vers_1910.jpg — in Tunisia.<br /><br /><br /><br /><br />
Saaen Ji
1910 کا عرب ملک تیونس- جب ایک بغیر کپڑوں کی کم عمر غلام کنیز آپنے آقا مولانا کو وضو کروا رہی ہے۔
یہ بات نہیں کہ اسلام نے خودبخود انسانیت کی فلاح کی خاطر غلام رکھنا بند کر دیا۔ یہ تو مغربی لعنت ملامت اور دباوُ تھا جس کے آگے مجبور ہو کر مسلمانوں نے کنیز، لونڈی اور غلام رکھنے کا سلسلہ اوپر اوپر سے بند کیا مگر بالواسطہ یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے.

یہ تصویر CHATELAIN Marcel (Eugène) نے کھینچی ہے۔ ان کی 1903 سے 1914 عرصے میں تیونس کیں کھینچی گئی تصاویر کو تلاش کر کہ منظر عام پر لایا گیا ہے۔ یہ تصاویر فرانس کی ایک آرٹ نیلام گھر میں موجود ہیں۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s